Monthly Archives: August 2011

Apne Honto’n Pe Sajana Chahta Hoon ( اپنے ہونٹوں پہ سجانا چاہتا ہوں )

Standard

 

اپنے ہونٹوں پر سجانا چاہتا ہوں

آ تجھے ميں گنگنانا چاہتا ہوں

 

کوئی آنسو تيرے دامن پر گرا کر

بُوند کو موتی بنانا چاہتا ہوں

 

تھک گيا ميں کرتے کرتے ياد تجھ کو

اب تجھے ميں ياد آنا چاہتا ہوں

 

چھا رہا ہے ساری بستی ميں اندھيرا

روشنی کو، گھر جلانا چاہتا ہوں

 

آخری ہچکی ترے زانو پہ آئے

موت بھی ميں شاعرانہ چاہتا ہوں

قتیل شفائی

*Background image is an artwork by Iman Maliki

 

Advertisements