Monthly Archives: September 2012

Tum meri Zindagi ki Aadat ho (تم میری زندگی کی عادت ہو)

Standard

تم حقیقت نہیں ہو حسرت ہو

جو ملے خواب میں وہ دولت ہو

میں تمہارے ہی دم سے زندہ ہوں

مر ہی جاؤں جو تم سے فرصت ہو

تم ہو تو خوشبو کے خواب کی خوشبو

اور اتنی ہی بے مروت ہو

تم ہو پہلو میں پر قرار نہیں

یعنی ایسا ہے جیسے فرقت ہو

کس طرح چھوڑ دوں تمہیں جاناں

تم میری زندگی کی عادت ہو

کس لیے دیکھتی ہو آئینہ

تم تو خود سے بھی خوبصورت ہو

داستاں ختم ہونے والی ہے

تم میری آخری محبت ہو

جون ایلیا

 

 

Tum Haqiqat Nahi Ho Hasrat Ho

Jo Mile Khuwab Main Wo Daulat Ho

 

Mai Tumhare He Dum Se Zinda Hun

Mar He Jaaun Jo Tumse Fursat ho

 

Tum Ho To Khushboo Ke Khuwab Ki Khushboo

Aur Itni He Be.Muravat Ho

 

Tum Ho Pehlu Mai Per Qaraar Nahin

Yaani Aisa Hai Jaise Furqat Ho

 

Kis tarha Chhor Dun Tumhe Jaana

Tum Meri Zindagi Ki Aadat Ho

 

Kis Liye Dekhti Ho Aaina ?

Tum to Khud Se Bhe Khoobsurat Ho

 

Daastan Khatam Hone Wali Hai

Tum Meri Aakhri Mohabbat Ho

 

Jaun Elia

Advertisements

Is Se Pehle k Yeh Duniya Mujhe Ruswa Kar De (اس سے پہلے کہ یہ دنیا مجھے رسوا کر دے)

Standard

 
 

اس سے پہلے کہ یہ دنیا مجھے رسوا کر دے

تُو میری روح میرے جسم کو اچھا کر دے

 
 

کس قدر ٹوٹ رہی ہے میری وحدت مجھ میں

اے میری وحدتوں والے مجھے یکجا کر دے

 
 

یہ جو حالات ہیں میرے ، میں نے بنائے ہیں مگر

جیسا “تُو” چاہتا ہے مجھے اب ویسا کر دے

 
 

میرے ہر فیصلے میں تیری رضا شامل ہو

جو تیرا حکم ہو ، میرا ارادہ کر دے

 
 

مجھ کو وہ علم سکھا جس سے اجالے پھیلیں

مجھ کو وہ اسم پڑھا جو مجھے زندہ کر دے

 
 

ضائع ہونےسے بچا لے میرے معبود مجھے

یہ نہ ہو وقت مجھے کھیل تماشہ کر دے

 
 

میں مسافر ہوں سو رستے مجھے راس آئے ہیں

میری منزل کو میرے واستے راستہ کر دے

 
 

میری آواز تیری حمد سے لبریز رہے

بزمِ قونین میں جاری میرا نغمہ کر دے

 
 

۔ علامہ اقبال –

 
 

Is se pehle k ye duniya mujhe ruswa kar de

Tu meri rooh , mere jism ko acha kar de

 
 

Kis qadr toot rahi hai meri wahdat mujh main

Ae meri wahdato’n walay .. mujhe yaq’ja kar de

 
 

Ye jo haalaat hain mere, maine banaye hain magar..

Jaisa “Tu” chahta hai mujhe ab waisa kar de

 
 

Mere har faislay main Teri raza shamil ho

Jo Tera hukm ho, mera irada kar de

 
 

Mujhko wo ilm sikha jis se ujaala phelay

Mujhko wo ism parha jo mujhe zinda kar de

 
 

Zaya honay se bachaa le mere Ma’bood mujhko

Ye na ho waqt mujhe khel tamaasha kar de

 
 

Main musafir hoon so mujhe raas aye hain

Meri manzil ko mere waastay raasta kar de

 
 

Meri awaaz Teri Hamd se labraiz rahay

Bazm-e-qonain main jaari mera naghma kar de

 
 

– Allama Iqbal –